تازہ ترین قومی مشہور خبر

پی آئی اے کااے ٹی آرطیارہ گِر کر تباہ،عملے سمیت تمام مسافر ہلاک

pia

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک): پی آئی اے کا چترال سے اسلام آباد آنے والا مسافر طیارہ حویلیاں کے قریب گر کر تباہ ہو گیا۔ طیارے میں ڈی سی چترال اسامہ وڑائچ سمیت معروف شخصیت جنید جمشید انکی اہلیہ بھی سوار تھے۔
ذرائع کے مطابق اسلام آباد پہنچنے سے کچھ پہلے اے ٹی آر طیارے کا راڈار سے رابطہ منقطع ہوا۔ طیارہ حویلیاں کے قریب مجافہ گاﺅں (سدابتولنی) میں گر کر تباہ ہوا۔ ترجمان سول ایوی ایشن نے کہا ہے کہ طیارہ 3 بج کر50 منٹ پر چترال سے روانہ ہوا جس کا 4 بج کر 40 منٹ پر راڈار سے رابطہ منقطع ہوگیا۔
آئی ایس پی آر کے مطابق، آرمی کے جوان اور ہیلی کاپٹرز بھی ریسکیو آپریشن کےلئے حادثے کی جگہ پہنچ گئے اور امدادی کام شروع کردیا 42 نعشیں نکالی لی گئیں۔
پی آئی اے کی فلائٹ نمبر پی کے661 اے ٹی آر 42طیارہ ہے، عملے کے ارکان سمیت 48افراد سوار تھے، طیارہ حویلیاں آرڈیننس فیکٹری کے قریب پہاڑی علاقے میںگرکر تباہ ہوا، طیارہ گرنے کے مقام سے دھواں اٹھتا رہا جو دور دور تک دیکھا گیا۔ پہاڑی علاقہ ہونے کی وجہ سے مذکورہ مقام پر پہنچنے میں دشواری کا سامنا کرنا پڑا۔ جہاز کے کیپٹن صالح جنجوعہ تھے جبکہ دیگر عملے میں کو پائلٹ احمد جنجوعہ اور ٹرینی پائلٹ علی اکرم، ایئر ہوسٹس صدف فاروق اور عاصمہ عادل شامل تھیں۔
حویلیاں کے قریب طیارہ خراب ہونے کے حوالے سے جہاز کے کیپٹن نے مے ڈے کال دی، جس کے بعد طیارہ حادثے کا شکار ہو گیا۔ واضح رہے کہ مے ڈے کال کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ پرواز انتہائی خطرے میں ہے، اس کال کو انتہائی درجے کی ایمرجنسی سمجھا جاتا ہے اور یہ تصور کیا جاتا ہے کہ طیارے پر کیپٹن کا کنٹرول ختم ہوگیا۔ سول ایوی ایشن کے مطابق طیارہ 4بج کر 45منٹ پر اسلام آباد پہنچنا تھا۔ ترجمان پی آئی اے کے مطابق طیارہ سدا بتولنی نامی گاﺅں کے قریب گرا حادثے کے بعد امدادی کاموں کا سلسلہ جاری ہے۔
طیارے میں سوار جنید جمشید کے کاروباری ساتھی محمود عالم کا کہنا ہے کہ جنید چترال میں تبلیغ کیلئےگئے تھے۔ انہیں دو روز پہلے اسلام آباد واپس آنا تھا۔ جنید جمشید سے 3، 4 دن پہلے بات ہوئی تھی۔ طیارے میں 9 خواتین 31 مردوں اور دو شیرخوار بچوں اور عملے کے 6ارکان سمیت 48 افراد سوار تھے۔
صدر مملکت ممنون حسین اور وزیراعظم نواز شریف نے چترال سے اسلام آباد آتے ہوئے حویلیاں کے مقام پر طیارہ کے حادثے میں قیمتی جانوں کے ضیاع پر انتہائی افسوس کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے جاں بحق ہونے والے افراد کی مغفرت، بلندی درجات اور اہل خانہ کیلئے صبر جمیل کی دعا کی۔
صدر ممنون حسین نے ریسکیو ٹیموں کو ہنگامی بنیادوں پر سرگرمیاں شروع کرنے کی ہدایت کی۔ صدر مملکت نے متعلقہ اداروں کو ہدایت کی کہ متاثرہ خاندانوں کے ساتھ مکمل تعاون کیا جائے۔
وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان نے چترال سے اسلام آباد آنے والا مسافر طیارہ گر کرتباہ ہونے پر امدادی کارروائیوں کے لئے تمام متعلقہ وفاقی اداروں کو صوبائی حکومت اور انتظامیہ کو ریسکیو اور ریلیف میں مدد فراہم کرنے کی ہدایت دی۔ ایف آئی اے ابتدائی تحقیقات میں معاونت فراہم کرے گی جبکہ نادرا کی ٹیمیں مسافروں کی شناخت کے سلسلے میں خدمات سرانجام دے گی-
صوبائی وزیر مشتاق غنی نے کہا ہے کہ طیارے میں ڈی سی چترال اوردو چینی اور ایک برطانوی باشندہ بھی سوار تھا۔ جنید جمشید کے بھائی نے بھی ان کی طیارے میں موجودگی کی تصدیق کی۔ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین عمران خان نے چترال سے اسلام آباد آنے والے طیارے کے حادثے پر اظہار افسوس کیا اور تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔ امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے بھی طیارے کی تباہی پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔ چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے بھی طیارے کی تباہی پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے۔