بین الاقوامی

فیدل کاسترو 90 برس کی عمر میں انتقال کر گئے

castro

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک): کیوبا کے رہنما فیدل کاسترو 90 سال کی عمر میں کیوبا کے مقامی وقت کے مطابق جمعہ کی رات ساڑھے دس بجے انتقال کر گئے۔
فیدل کاسترو کی یک جماعتی حکومت نے کیوبا پر تقریباً نصف صدی تک حکومت کی اور 2008 میں اقتدار اپنے بھائی راؤل کاسترو کو منتقل کر دیا۔ ان کے مداحین ان کے بارے میں کہتے ہیں کہ انھوں نے کیوبا واپس عوام کو سونپ دیا۔ تاہم ان کے مخالفین ان پر حزب اختلاف کو سختی سے کچلنے کا الزام لگاتے ہیں۔
اطلاعات کے مطابق کیوبا کے موجودہ صدر راؤل کاسترو نے رات گئے سرکاری ٹیلی وژن پر ایک غیر متوقع خطاب میں بتایا کہ فیدل کاسترو انتقال کر گئے ہیں اور ان کی آخری رسومات سوموار کو ادا کی جائیں گی۔
فیدل کاسترو کے انتقال کے بعد اب کئی دنوں تک کیوبا میں سوگ منایا جائے گا۔ ہوانا میں سابق صدر کے انتقال کی خبر نے کئی افراد کو حیران کر دیا۔
گزشتہ اپریل میں فیدل کاسترو نے کمیونسٹ پارٹی کانگریس کے آخری دن پر غیر متوقع خطاب کیا تھا۔
انھوں نے اپنی بڑھتی ہوئ عمر کا اعتراف کرتے ہوئے کہا تھا کہ ’کیوبا کا کمیونسٹ تصور صحیح ہے اور کیوبا کے عوام ضرور فاتح ہوں گے۔‘
فیدل کاسترو نے 2006 میں صحت کی خرابی کے باعث عارضی طور پر اپنے بھائی کو اقتدار سونپا تھا۔ تاہم دو سال بعد ان کے بھائی راؤل کاسترو باقاعدہ طور پر کیوبا کے صدر بن گئے تھے۔
فیدل کاسترو 1956 میں جلا وطنی کی زندگی گزارنے میکسیکو چلے گئے تھے-